پلندری، شاخ تراشی نہ ہونے کی وجہ سے بجلی کا خراب رہنا معمول

پلندری ( بیورو رپورٹ )پلندری میں شاخ تراشی نہ ہونے کی وجہ سے بجلی کا خراب رہنا معمول بن گیا لٹکتی تاریں کسی بڑے حادثہ کا سبب بن سکتی ہیں بجلی کے وولٹیج کم زیادہ ہونے سے لوگوں کو قیمتی اشیاء فریج ، موٹریں ، ٹی وی ، ایل سی ڈی ، کمپوٹر اور دیگر قیمتی مصنوعات محکمہ برقیات سدہنوتی کی غفلت اور لاپروائی سے جلنے کی وجہ سے عوام سراپا احتجاج ہیں بجلی بندش کے حوالے سے ایس ڈی او برقیات کو جب شکایت کی جاتی ہے تو آفیسر موصوف صارفین بجلی کی شکایات کا ازالہ کرنے کے بجائے بدتمیزی سے پیش آنے لگا پلندری میں بجلی کی خرابی اور قیمتی الیکٹرک مصنوعات کا جلنا معمول بن چکا ہے ایس ڈی او برقیات ڈان کو روپ دھار چکا ہے عوام کو ریلیف فراہم کرنے میں مکمل طور پر ناکام ہو چکا ہے ایس ڈی او برقیات کی یہ شکایات بھی ہیں کہ ایس ڈی او برقیات پلندری سرکاری گاڑی ذاتی کاموں کے لئے استعمال کرتے ہیں صارفین بجلی سے کوئی سروکار نہیں روزانہ اپنے گھر جانے اور گھر کے کام کاج میں بھی سرکاری گاڑی کے استعمال کی شکایات زبان زد عام ہیں۔ جب کے فیلڈ ملازمین کو نہ تو مناسب گلوز اور دیگر اوزار اورنہ ہی پٹرول فراہم کیا جا رہا ہے اورنہ ہی موٹر سائیکل کی مینٹنس کے لئے فنڈز فراہم کیا جارہا ہے عوامی و سماجی حلقوں کا کہنا ہے کہ ظلم ہیکہ پیسے آفیسران کھا جاتے ہیں غریب ملازمین کے ساتھ زیادتی یہ ہے کہ اُنھیں کسی قسم کو کوئی ریلیف نہیں دیا جا رہا۔ جسکی وجہ سے ملازمین اس وقت ہڑتال پر ہیں سارا بجٹ بشمول شاخ تراشی۔مینٹینس کا بجٹ آفیسران کھا جاتے ہیں بوسیدہ لائنیں جگہ جگہ درختوں سے ٹکراتی تاریں جن کی وجہ سے حادثات بھی ہو چکے ہیں لیکن ذمہ داران کو ٹس سے مس نہ ہے

اپنا تبصرہ بھیجیں